Ultimate magazine theme for WordPress.
GFS builders

وفاقی وزرا سمیت قومی و چاروں صوبائی اسمبلیوں کے 154 ارکان کی رکنیت معطل کردی گئی

257

اسلام آباد (آن لائن نیوز روم) الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) نے مہلت دینے کے باوجود اثاثوں کی تفصیلات نہ جمع کروانے پر وفاقی وزرا سمیت چاروں صوبائی اسمبلیوں، قومی اسمبلی اور سینیٹ کے 154 اراکین کی رکنیت معطل کردی۔ خیال رہے کہ پارلیمنٹ اور چاروں صوبائی اسمبلی سے تعلق رکھنے والے ایک ہزار 195 قانون سازوں میں سے 394 ارکان پارلیمنٹ بشمول 8 وزرا نے آخری تاریخ 31 دسمبر گزرنے کے بعد بھی اپنے اثاثوں کے تفصیلات کمیشن میں جمع نہیں کروائی تھی۔ جس پر ای سی پی نے خبردار کیا تھا کہ اگر عوامی نمائندے 16 جنوری تک اپنے اثاثوں کی تفصیلات فراہم نہیں کرتے ہیں تو ان کی متعلقہ قومی یا صوبائی اسمبلی یا سینیٹ کی رکنیت معطل کردی جائے گی۔ چنانچہ آج الیکشن کمیشن کے جاری کردہ اعلامیے کے مطابق 154 اراکین کی رکنیت معطل کردی گئی جن میں 3 سینیٹرز، 48 اراکین قومی اسمبلی اور 103 اراکین صوبائی اسمبلی شامل ہیں۔ صوبائی اسمبلی کے جن اراکین کی رکنیت معطل کی گئی ان میں پنجاب اسمبلی کے 52 اراکین، خیبرپختونخوا اسمبلی کے 26 اراکین، سندھ اسمبلی کے 19 جبکہ بلوچستان اسمبلی کے 6 اراکین شامل ہیں۔ کمیشن کی ہدایت کے باوجود اثاثوں کی تفصیلات جمع نہ کروانے جن وفاقی وزرا کی رکنیت معطل ہوئی ان میں فواد چوہدری، فہمیدہ مرزا، علی زیدی شامل ہیں۔ ان کے علاوہ معطل ہونے والے 48 اراکین قومی اسمبلی میں خالد مقبول صدیقی، مائزہ حمید، روحیلہ اصغر، سردار محمد خان لغاری، میر خان محمد جمالی، جے پرکاش، تھامس جیمز اور دیگر شامل ہیں۔ اسی طرح  سندھ اسمبلی کے اراکین میں صوبائی وزیر سید سردار شاہ کے علاوہ حسنین علی مرزا، سردار خان چانڈیو، اکرام اللہ نیازی، قاضی شمس الدین، مکیشن کمار چاولہ سید ضیا عباس شاہ اور دیگر شامل ہیں۔

تبصرے بند ہیں، لیکن فورم کے قوائد اور لحاظ کھلے ہیں.