Ultimate magazine theme for WordPress.
GFS builders

خیرپور کی بچی مونیکا لاڑک کیس میں گرفتار ملزم کے اہم انکشافات

205

سکھر (آن لائن نیوز روم) ایڈیشنل آء جی پی سکھر ڈاکٹر کامران فضل، ڈی آء جی پی سکھر فدا حسین مستوئی اور ایس ایس پی خیرپور امیر سعود مگسی نے مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا ہے کہ خیرپور پولیس نے بڑی کامیابی حاصل کرتے ہوئے زیادی کے بعد قتل ہونے والی معصوم بچی مونیکا لاڑک قتل کیس کا اہم ملزم عبداللہ عرف ابلی لاڑک گرفتار کرلیا ہے، ملزم کا  DNA ٹیسٹ میچ ہوگیا۔ 09/01/2021  کو تھانہ پیرگوٹھ کی حدود میں معصوم بچی مونا عرف مونیکالاڑک عمر 7/8 سال و نامعلوم ملزمان نے زبردستی زنا کرنے کے بعد قتل کیا تھا، قتل کے بعد جرم کو چھپانے کے لئے لاش کو کیلوں کے باغ میں پھینک دی، مورخہ 11/01/2021 کو ھادل شاھ میں کیلوں کے باغ میں لاش ملی۔ جس کے بعد غلام شبیر لاڑک کی مدعیت میں تین نامعلوم ملزمان کے خلاف تھانہ پیرگوٹھ پہ درج ہوا- اس مقدمے کی حساسیت کو مد نظر رکھتے ہوئے  ایس پی ھیڈکوارٹر جناب نوشیروان چانڈیو صاحب کی سربراہی میں ٹیم تشکیل دی گئی اور ریڈنگ پارٹی بھی بنائی گئی۔ اس کے علاوہ آء ٹی ٹیم نے مشکوک بندوں کا کال ڈیٹا ریکارڈ اور جاء وقوع کی Geo-Fencing بھی کی، جس میں 10000 سے زائد لوگوں کے موبائل نمبرز اینالائیز کئے گئے۔ افسران کے مطابق جیسا کہ یہ کیس ایک بلائنڈ مرڈر تھا، جس میں کوئی بھی چشم دید گواہ نہیں تھا اور کیس کا مکمل دارومدار سائنٹیفک ایویڈنس اور DNA پہ کیا گیا، اس لئے گاؤں لونگ لاڑک، حادل شاھ، اور گردونواح کے لوگوں کا DNA تیسٹ لیا گیا اور LUHMS لیبارٹری جامشورو میچنگ اور پروسز کے لیے بھیجے گئے، اس کیس کا چیف جسٹس ھاء کورٹ آف سندھ نے نوٹس لیا اور تفصیلی رپورٹ منگوائی، کیس میں گراؤنڈ اور ٹیکنیکل انفارمیشن کی بنیاد پر 50 سے زائد مشکوک افراد کو زیر حراست لیا گیا اور تفتیش کی گئی، مورخہ 17/01/2021 کو فارینزک لمس لیبارٹری جامشورو کی رپورٹ کے تحت ملزم عبداللہ عرف ابلی لاڑک کا DNA میچ ہوا، جس کے بعد پولیس نے کاروائی کرتے ہوئے ملزم عبداللہ عرف ابلی لاڑک کو گرفتار کیا۔ ڈی آئی جی کے مطابق گرفتار ملزم نے دوران تفتیش اعتراف کیا کہ اس نے مورخہ 09/01/2021 کو مونا عرف مونیکا لاڑک کو راستے سے اٹھایا تھا پھر اس کو گھوڑوں کے فارم میں ایک کمرے کے اندر بند کیا تھا اور اس کے ساتھ زبردستی زنا کی اور بعد میں گلا دبا کر قتل کرنے کا بھی اعتراف کیا، ملزم نے مزید بتایا کہ اسی  دن ہی صبح سویرے کے وقت  اس نے جرم کو چھپانے کے لئے  لاش کو کیلوں کے باغ میں پھنک دیا تھا تاکہ ملزم پر کسی کا شک نہ ہو، گرفتار ملزم سے مزید تفتیش جاری ہے۔

تبصرے بند ہیں، لیکن فورم کے قوائد اور لحاظ کھلے ہیں.