Ultimate magazine theme for WordPress.

کوئٹہ میں اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم کا پاور شو، مولانا فضل الرحمان اور مریم نواز جلسہ گاہ پہنچ گئے

0 105

کوئٹہ (آن لائن نیوز روم) حکومت مخالف اپوزیشن اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) اپنا تیسرا پاور شور آج کوئٹہ میں کر رہی ہے اور اس سلسلے میں مرکزی قائدین مولانا فضل الرحمٰن اور مریم نواز جلسہ گاہ پہنچ گئے ہیں۔ کوئٹہ کے ایوب اسٹیڈیم میں ہونے والے پی ڈی ایم کے آج کے اس تیسرے جلسے میں جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ اور صدر پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمٰن، مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز و دیگر قائدین شریک ہوں گے جبکہ پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور مسلم لیگ (ن) کے تاحیات قائد اور سابق وزیراعظم نواز شریف کا بذریعہ ویڈیو لنک خطاب متوقع ہے۔ خیال رہے کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کی حکومت مخالف تحریک کے سلسلے میں جلسوں کا باقاعدہ آغاز 16 اکتوبر کو پنجاب کے شہر گوجرانوالہ سے ہوا تھا، جس کے بعد 18 اکتوبر کو کراچی میں پی ڈی ایم نے اپنی سیاسی طاقت کا مظاہرہ کیا تھا۔ تاہم 16 اکتوبر کو مسلم لیگ (ن) کی قیادت میں ہونے والے جلسے میں نواز شریف نے خطاب کیا تھا اور حکومت، پاک فوج اور اداروں پر تنقید کی تھی، تاہم پیپلز پارٹی کی میزبانی میں منعقد ہونے والے 18 اکتوبر کے جلسے میں نواز شریف نے خطاب نہیں کیا تھا۔ آج ہونے والے تیسرے جلسے میں سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں جبکہ بلوچستان حکومت نے دفعہ 144 کے تحت کوئٹہ میں ڈبل سواری پر بھی پابندی عائد کردی ہے۔ یہی نہیں بلکہ حکومت بلوچستان کے ترجمان لیاقت شاہوانی نے اپوزیشن اتحاد پر زور بھی دیا تھا کہ نیکٹا کے جاری سیکیورٹی الرٹ کی بنیاد پر کوئٹہ کا جلسہ مؤخر کریں۔ تاہم پی ڈی ایم کی قیادت کا کہنا تھا کہ حکومت اپوزیشن کے جلسوں کی کامیابی سے خوف زدہ ہے۔ پی ڈی ایم کے صدر اور جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمٰن اور مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز نے کہا تھا کہ 25 اکتوبر کا کوئٹہ کا جلسہ مؤخر نہیں ہوگا کیونکہ حکومت بلوچستان کی ذمہ داری ہے کہ وہ جلسے میں مکمل سیکیورٹی فراہم کرے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.