Ultimate magazine theme for WordPress.

لاہور موٹروے کیس کا اہم ملزم عابد عادی مجرم نکلا، پہلے بھی ایک ماں اور بیٹی کو حوس کا نشانہ بنا چکا ہے

0 127

لاہور (آن لائن نیوز روم) لاہور موٹر وے ریپ کیس کا مبینہ مرکزی ملزم عابد اشتہاری مجرم نکلا اور اس کی وارداتوں کا ریکارڈ بھی سامنے آگیا۔ ملزم عابد  نے 2013 میں خاتون اور اس کی بیٹی سے زیادتی کے بعد متاثرہ خاندان سے صلح کرلی تھی لیکن جرائم سے باز نہ آیا تو علاقے سے نکال دیا گیا۔ 2013 سے 2017 تک زیادتی اور ڈکیتی سمیت دیگر جرائم کے 8 پرچے کٹے اور 8 سال میں کئی مرتبہ گرفتار ہوا مگر ضمانت پر رہا ہوگیا۔  عابد آخری بار 8 اگست 2020 کو گرفتار ہوا مگر چند دنوں بعد ہی ضمانت ہوگئی۔ ملزم عابد شہریوں کی جان و مال سے کھیلتا رہا مگر سزا کیوں نہ مل سکی؟ شہریوں نے نظام انصاف پر سوال اٹھا دیے۔ دوسرا ملزم وقار الحسن بھی ڈکیتی کی 2 وارداتوں میں ملوث نکلا اور دو ہفتے قبل ہی ضمانت پر رہا ہوا تھا۔ خیال رہے کہ پنجاب پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ لاہور موٹروے پر خاتون سے اجتماعی زیادتی کرنے والے دونوں ملزمان کا سراغ لگالیا گیا۔ متاثرہ خاتون سے حاصل نمونے ملزمان کے ڈی این اے سے میچ کر گئے ہیں، ڈی این اے نمونے فارنزک لیبارٹری کے ڈیٹا بینک میں پہلے سے موجود تھے، دستیاب شناخت کے مطابق ایک ملزم کا نام محمد عابد اور دوسرے کا وقار ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق 27 سالہ عابد کا تعلق بہاول نگر سے ہے، وہ لاہور آتا جاتا رہتاہے، ملزم عابد اشتہاری مجرم ہے کئی وارداتوں کا ریکارڈ ہے۔ ملزمان تاحال فرار ہیں اور اس کی تلاش جاری ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.