Ultimate magazine theme for WordPress.

بولی ووڈ اداکارہ نے سیاستدانوں کی جانب سے جنسی ہراساں کرنے پر خودکشی کرلی

0 543

ممبئی (آن لائن نیوز روم) گزشتہ ماہ ہی بولی وڈ کے نوجوان اداکار 34 سالہ سشانت سنگھ راجپوت نے ذہنی پریشانی اور اہم شوبز شخصیات کی جانب سے مبینہ طور پر نظر انداز کیے جانے پر خودکشی کرلی تھی۔ سشانت سنگھ راجپوت کی خودکشی نے بولی وڈ اور بھارت کو ہلا کر رکھ دیا تھا اور پولیس تاحال ان کی خودکشی کے معاملے کی تفتیش جاری رکھے ہوئے ہیں۔ اگرچہ پوسٹ مارٹم اور اب تک کی رپورٹس سے یہ ثابت ہوچکا ہے کہ سشانت سنگھ راجپوت نے خودکشی ہی کی تھی، تاہم پولیس یہ جاننے کی کوشش کر رہی ہے کہ ایسے کیا اسباب تھے جن کی وجہ سے اداکار سنگین قدم اٹھانے پر مجبور ہوئے۔ جہاں تاحال سشانت سنگھ راجپوت کی خودکشی کا معاملہ سلجھ نہیں پایا تھا، وہیں ایک اور خبر نے بھارتی شوبز انڈسٹری میں ایک نئی بحث کو چھیڑ دیا۔ بھارتی اداکارہ وجیا لکشمی کی جانب سے ہراساں کیے جانے کی وجہ سے خودکشی کی کوشش کرنے کی خبر نے سب کو افسردہ کردیا۔  تامل شوبز انڈسٹری کی مقبول اداکارہ وجیا لکشمی کی جانب سے اپنی زندگی کے خاتمے کی کوشش کی خبر نے سب کو پریشان کردیا اور لوگ اداکارہ کو ہراساں کرنے والی بااثر شخصیات کی گرفتاری کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق نوجوان مقبول تامل اداکارہ نے خودکشی کی کوشش سے قبل اپنے فیس بک اکاؤنٹ پر چند ویڈیوز شیئر کرکے سنگین قدم اٹھانے کی وضاحت کی اور بتایا کہ کس طرح ان کی زندگی مصیبت میں ڈال دی گئی۔  رپورٹ کے مطابق اداکارہ نے اپنی ایک ویڈیو میں تامل ناڈو کی مقامی سیاسی جماعتوں کے دو اہم رہنماؤں سیمان اور ہری نادر پر ہراساں کیے جانے کے الزامات عائد کیے۔ وجیا لکشمی نے اپنی ویڈیو میں بتایا کہ دونوں سیاسی رہنماؤں نے نہ صرف میڈیا میں ان کی تضحیک کی بلکہ وہ انہیں آن لائن ہراساں بھی کرتے رہے ہیں۔ اداکارہ نے الزام عائد کیا کہ دونوں بااثر رہنماؤں کی جانب سے ہراساں کیے جانے کی وجہ سے وہ شدید ذہنی اضطراب میں مبتلا ہوگئیں، جس وجہ سے اب وہ اپنی زندگی کا خاتمہ کرنے جا رہی ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.