Ultimate magazine theme for WordPress.

امریکی حسینہ کو ’بائی سیکسوئیل‘ کا لقب گلے پڑگیا

0 444

نیویارک: امریکی شہر نیویارک میں رواں برس ہونے والا مقابلہ حسن جیتنے والی 23 سالہ دوشیزہ کی جانب سے خود کو ’بائی سیکسوئیل‘ ظاہر کیے جانے کے بعد ان پر ہر سال منعقد ہونے والی ایک مذہبی پریڈ میں شرکت پر پابندی عائد کردی گئی۔ 23 سالہ دوشیزہ میڈیسن انستالا نے گزشتہ ماہ فروری کے آخر میں ٹرانس جینڈر افراد سے اظہار یکجہتی کے طور پر خود کو ’بائی سیکسوئیل‘ ظاہر کیا تھا۔ خیال رہے کہ ’بائی سیکسوئیل‘ اس شخص کو کہتے ہیں جو جنسی طور پر دونوں جنسوں یعنی مرد و خواتین میں یکساں طور پر دلچسپی رکھتا ہو اور ایسے افراد کو امریکا سمیت دنیا کے کئی ممالک میں تاحال متنازع جنسی رجحانات والے افراد کے طور پر دیکھا جاتا ہے۔ 23 سالہ دوشیزہ نے یورپی و امریکی ممالک میں ہر سال مارچ میں ہونے والی مذہبی پریڈ ’سینٹ پیٹرس ڈے‘ کے نیویارک میں انعقاد سے ایک دن قبل ہی خود کو ’بائی سیکسوئیل‘ ظاہر کیا تھا۔ مقابلہ منعقد کرنے والی تنظیم کے عہدیدار نے میڈیا کو بتایا کہ انہیں بھی یہ سن کو حیرانی ہوئی تھی کہ دوشیزہ پر پریڈ منتظمین نے پابندی لگائی۔ مقابلے کا انعقاد کرنے والی تنظیم کے عہدیدار کا کہنا تھا کہ پریڈ کے منتظمین نے انہیں بتایا کہ وہ سیکیورٹی وجوہات کی وجہ سے 23 سالہ دوشیزہ میڈیسن انستالا کو پریڈ میں شرکت کی اجازت نہیں دے سکتے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.